پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھائی جائیں گی یا نہیں؟ وزیر اعظم عمران خان نے فیصلہ سُنا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) تفصیلات کے مطابق یکم ستمبر سے پٹرولیم مصنوعات 8 روپے فی لیٹر مہنگا ہونے کا امکان ظاہر کیا جا رہا تھا۔زرائع کے مطابق پٹرول کی قیمت میں ساڑھے 7 روپے فی لیٹر اضافے کا امکان تھا۔ ہائی سپیڈ ڈیزل 8 روپے فی لیٹر تک مہنگا ہونے کا امکان ظاہر کیا گیا۔ بتایا گیا تھا کہ حکومت 31 اگست کو نئی قیمتوں کا تعین کرے گی۔

تاہم وزیراعظم نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی تجویز مسترد کر دی۔تفصیلات کے مطابق یکم ستمبر سے پٹرولیم مصنوعات 8 روپے فی لیٹر مہنگا ہونے کا امکان ظاہر کیا جا رہا تھا۔زرائع کے مطابق پٹرول کی قیمت میں ساڑھے 7 روپے فی لیٹر اضافے کا امکان تھا۔ ہائی سپیڈ ڈیزل 8 روپے فی لیٹر تک مہنگا ہونے کا امکان ظاہر کیا گیا ۔بتایا گیا کہ حکومت 31 اگست کو نئی قیمتوں کا تعین کرے گی۔ تاہم جب یہ تجویز وزیراعظم عمران خان کے آگے رکھی گئی تو انہوں نے مسترد کر دی،وزیراعظم نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی تجویز کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ مشکل حالا ت میں عوام پر مزید بوجھ نہیں ڈالا جا سکتا۔ واضح رہے کہ میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا تھا کہ اوگرا کی جانب سے یکم ستمبر سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کیلئے باقاعدہ سمری تیار کی گئی۔سمری میں پٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 7 روپے اور ڈیزل کی فی لیٹر قیمت میں 8 روپے سے زائد اضافے کی سفارش کی گئی ۔ سمری وزارت خزانہ کو بھجوا دی گئی ۔ وزارت خزانہ وزیراعظم سے مشاورت کے بعد قیمتوں میں اضافہ کرنے یا نہ کرنے کے حوالے سے حتمی اعلان کرے گی۔ دوسری جانب وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے پیٹرولیم ندیم بابر نے کہا ہے کہ حکومت نے صارفین کی سہولت کیلئے تیل کی قیمتوں کی پالیسی میں تبدیلیاں کی ہیں۔

About Admin

Check Also

اب ہر سرکاری ملازم کے پاس اپنا گھر،اپنی گاڑی ہوگی اورحکومت نے انتہائی شاندار اعلان کر دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)ہر سرکاری ملازم کی خواہش ہوتی ہے کہ اُس کے پاس اپنا ذاتی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *