Breaking News

مجھے کوئی ضرورت نہیں تھی ،میں یہ کام صرف عمران خان کے کہنے پر کیا ۔۔۔۔ عاصم سلیم باجوہ کے تہلکہ خیز انکشافات

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وزیراعظم کے معاون خصوصی و چیئرمین سی پیک اتھارٹی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ نے کہا ہے کہ منتخب نمائندہ نہیں پھربھی عمران خان کی ہدایت پر اثاثے ظاہر کیے۔نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ سی پیک اتھارٹی میں تعیناتی ہوئی تو پراپیگنڈا شروع کردیاگیا۔

میرے خلاف پراپیگنڈا کیا گیا کہ میری تنخواہ50لاکھ ہے حالانکہ میری تنخواہ اس سے بہت کم ہے عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ میرے بھائیوں نی2002میں امریکا میں کاروبارشروع کیا،میری3بھائی 1991میں امریکا پڑھنے گئے تھے اورپھرکاروبارکیا، کاروبار سے متعلق لکھا ہوا ہے کہ60فیصد بینکوں سے قرضہ لیاگیا۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق چیئر مین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ نے بطور وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے اطلاعات کے عہدے سے استعفی دینے کا فیصلہ کرلیا۔ انہوں نے واضح کیا ہے کہ ان کے پاس ہر چیز کا 100 فیصد دستاویزی ریکارڈ موجود ہے۔نجی نیوز چینل دنیا نیوز کے مطابق انہوں نے کہا ہےکہ معاون خصوصی اطلاعات کےعہدےسےمستعفی ہونےکافیصلہ کیاہے،جلدوزیراعظم عمران خان کواستعفیٰ پیش کروں گا۔ان کا کہنا تھا کہ چیئرمین سی پیک اتھارٹی کےعہدےپرکام کرتارہوں گا، سی پیک منصوبےپرپوری توجہ دیناچاہتاہوں۔نجی ٹی وی جیو نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ کمپنیوں میں جس کا جتنا شیئر تھا اسی حساب سے منافع ملا ہوگا۔ کچھ پرافٹ آئے لیکن زیادہ تر پیسے بینک کے قرض کی ادائیگی میں گئے ہیں، 70 میں سے 60 ملین ڈالر بینک کا قرضہ تھا جس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ بینک کو کتنا حصہ جاتا رہا ہوگا۔اینکر پرسن شاہزیب خانزادہ نے ان سے سوال پوچھا کہ اگر آپ کی اہلیہ نے یکم جون کو پیسے بزنس سے نکال لیے تو وہ پیسے کہاں گئے، کیا وہ پاکستان آئے؟اس سوال کے جواب میں لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ کون سے پیسے کہاں سے کدھر گئے، ہر چیز 100 فیصد ڈاکیومنٹڈ ہے، “میرے پاس سارا ریکارڈ موجود ہے۔

About Admin

Check Also

شادی کی تیسری رات دولہے نے دولہن کے ساتھ ایسا کام کردیا کہ دونوں خاندانوں پر قیامت ٹوٹ پڑی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) شادی ہر انسان کی بڑی خواہش ہوتی ہے اور ہر انسان اپنی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *