Breaking News

اب یہ کام کرے گا یا پھر میں۔۔!! آئی جی پنجاب ’ بغیر یونیفارم‘ وزیر اعلیٰ ہاؤس پہنچ گئے، کام کرنے سے صاف انکار، عثمان بُزدار کے لیے صورتحال پر قابو پانا مشکل ہوگیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سی سی پی او لاہور کی تعیناتی کے بعد آئی جی پنجاب اور پنجاب حکومت میں شدید اختلافات سامنے آ گئے ہیں۔آئی جی پنجاب شعیب دستگیر خان نے کام جاری رکھنے سے انکار کر دیا ہے۔ آئی جی پنجاب بغیر یونیفارم وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار سے ملنے پہنچ گئے۔

آئی جی پنجاب شعیب دستگیر نے اصرار کیا ہے کہ سی سی پی او عمر شیخ رہیں گے یا پھر میں۔اسی حوالے سے عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ آئی جی پنجاب کو سی سی پی او کی تعیناتی پر اعتراض تھا،انہوں نے کہا کہ اتنی اہم پوسٹ کے حوالے سے مجھ سے مشاورت نہیں کی گئی۔جب کہ عمر شیخ نے بھی آئی جی پنجاب کے حوالے سے سخت جملوں کا استعمال کیا اور کہا کہ مجھے آئی جی پنجاب نے نہیں بلکہ وزیراعظم اور وزیراعلیٰ نے تعینات کیا ہے۔اس پر آئی جی پنجاب سخت برہم ہوئے اور کہا کہ عمر شیخ نے ڈسپلن کی خلاف ورزی کی ہے میں اس شخص کے ساتھ کام نہیں کر سکتا۔لاہورپولیس کے نئے تعینات ہونے والے سی سی پی او محمد عمر شیخ نے چند روز قبل اپنے عہدے کا چارج سنبھالا۔ محمد عمر شیخ کو پولیس کے چاق و چوبند دستے نے سلامی پیش کی۔ نئے کمانڈر لاہور پولیس کا استقبال ڈی آئی جی انوسٹی گیشن شہزادہ سلطان، ڈی آئی جی آپریشنز لاہور اشفاق احمد خان نے کیا۔ اس موقع پرسی ٹی او لاہور کیپٹن (ر) سید حماد عابد، ایس ایس پی ایڈمن کیپٹن (ر) لیاقت علی ملک، ایس ایس پی ڈسپلن عبادت نثار اور ایس پی لیگل آصف بھی موقعہ پر موجود تھے۔ترجمان کے مطابق سی سی پی او لاہور محمد عمر شیخ کا تعلق بیسویں کامن سے ہے۔ عمر شیخ نے ضلع نواب شاہ، جیکب آباد ، لاڑکانہ ، جام شورو سمیت متعدد اضلاع میں بطور ڈی پی او ڈی جی خان میں بطور ریجنل پولیس آفیسر بھی خدمات فرائض سرانجام دیں۔

About Admin

Check Also

صلح کس نے اور کن شرائط پر کروائی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) کسی کی صلح کروانا بھی بہت بڑا نیکی کا کام ہے اس …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *