Breaking News

لڑکی نے کہا ” سر مجھے خارش ہوتی ہے۔۔۔” عدالت نے جواب دیا ” بیٹا وہ تو آدھے پاکستان کو ہوتی ہے ، پاکستانی تاریخ کا سب سے انوکھا مقدمہ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سر مجھے خارش ہوتی ہے ۔۔۔ جج صاحب نے کہا کہ وہ تو آدھے پکستان کو ہوتی ہے ملکی تاریخ کا سب سے انوکھا مقدمہ سامنے آگیا جب ایک لڑکی اپنی جنس تبدیہلی کی درخواست لے کر عدالت کے رو برو آن کھڑی ہوئی اور اپنی اس خواہش کی حیران کن وجہ بتا دی ۔

سماعت ہائیکورٹ کے سنگل رکنی بنچ جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے کی۔درخواست گزار یسرا وحید اپنے وکیل راجا رضوان عباسی کے ساتھ عدالت میں پیش ہوئیں۔ جی آپ بتائیں کہ آپ جنس تبدیل کیوں کرنا چاہتی ہو، اسلام آباد ہائی کورٹ کے جج جسٹس میاں گل حسن اورنگ کا استفسار ،مجھے خارش ہوتی ہے، یسرا وحید کا عدالت کو جواب،آدھے پاکستان کو خارش ہوتی ہے، جسٹس میاں گل حسن اورنگ کے ریمارکس ،عدالت میں تمام وکلا اور سائلین کے قہقے،13 سال کی عمر میں جنیاتی تبدیلی محسوس کرنے پر ڈاکٹرز سے چیک کرایا، راجا رضوان عباسی ایڈووکیٹ،چیک اپ کے بعد ڈاکٹروں نے جنس تبدیلی تک ملتوی کر دی گئی،کیلئے “ری اسائنمنٹ سرجری” تجویز کی، راجا رضوان عباسی ایڈووکیٹ،ڈاکٹرون کی جانب سے سرجری کی تجویز کے بعد سے ذہنی اذیت کا شکار ہوں، راجا رضوان عباسی ایڈووکیٹ ،جنس تبدیلی کیلئے سرجری کے اخراجات کا بندوبست کر لیا ہے، راجا رضوان عباسی ایڈووکیٹ،جنس تبدیلی کے بعد نادرا ریکارڈ، ووٹر لسٹ اور تعلیمی سرٹیفکیٹس پر نام کی تبدیلی میں قانونی روکاوٹیں ہو سکتی ہیں، راجا رضوان عباسی ایڈووکیٹ عدالت تمام اداروں کو نام اور جنس کی تبدیلی کیلئے حکم جاری کرے، راجا رضوان عباسی ایڈووکیٹ یسرا وحید کی میڈیکل رپورٹ بھی عدالت میں جمع کرایا گیا۔

About Admin

Check Also

کیاواقعی ٹیلی نارپاکستان میں اپنےآپریشنز بند کررہاہے؟پی ٹی اے کا ردعمل آ گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان ٹیلی کمیونیکشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نے مشہور ٹیلی کام کمپنی”ٹیلی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *