Breaking News

رات گئے تحریک انصاف نے بڑی گیم کھیل ڈالی،مولانا فضل الرحمن کےاہم ترین ساتھی کو پی ٹی آئی میں شمولیت کی دعوت دے دی گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان کے چند فیصلے ملک و عوام کیلئے معقول تھے، ہم جمعیت علماء اسلام پاکستان ہیں (ف) ایک گروپ ہے ہم اپنی جماعت کے ساتھیوں کو مربوط کرنے کیلئے تربیتی اجتماعات کررہے ہیں،مجھے نظر نہیں آرہا ہے کہ سیاسی جماعتوں میں جماعت اسلامی کے بغیرکوئی جماعت جمہوریت کی بنیاد پر قائم ہو۔

پی ڈی ایم اور اسٹیبلشمنٹ یہ دونوں ملک کو تقسیم کرنے کیلئے ماحول بنانے میں چکی کے دو پارٹس کا کردار ادا کررہی ہیں اور ان کا ہدف ایک ہوگا بظاہر عوام کو ایک دوسرے کے ساتھ الجھے ہوئے نظر آئینگے۔ ان خیالات کااظہار جمعیت علماء اسلام پاکستان کے مرکز ی رہنماء مولانا محمد خان شیرانی نے آن لائن سے بات چیت کرتے ہوئے کیا مولانا محمد خان شیرانی نے کہا کہ جمعیت علماء اسلام تقسیم نہیں ہوئی ہے نظم موجود ہے تنظیم میں کچھ نا عاقبت اندیش ساتھیوں کی سوچ قرار دوں گا اپنے آخرت گناہ کیا اور تنظیم کیلئے بھی انتشار کا باعث ہے اسلام سے مایوس کرنے کا ذریعہ بھی ہے یہ اختلاف ہے میرا پارٹی کے ذمہ دار ساتھیوں نے بڑے دھڑلے سے کہتے ہیں کہ ہم نے تنظیم سازی اور رکن سازی میں خیانت کی ہے اور نیا تنظیم کی تشکیل دی ہے اور ہم نہ خیانت کرتے ہیں اور نہ ہی ساتھ دیتے ہیں انہوں نے کہا کہ جمعیت علماء پاکستان نہیں ہے ہم جمعیت علماء اسلام پاکستان کے ارکان ہیں (ف) گروپ کے ساتھ نہیں ہیں ہم جمعیت علماء اسلام پاکستان ہیں ہم نے اپنے جماعت کے کے دیرینہ ساتھیوں کو مربوط رکھنے کیلئے تربیتی اجتماعات کررہے ہیں اگر ہم رابطے کا ذریعہ نہ بنیں تو مایوسی کا شکار ہوجائینگے یا کوئی اور سیاسی جماعت میں چلے جائینگے انہوں نے کہا کہ اداروں کے اندر تناؤ ہے میں نہیں سمجھتا ہوں کہ سیاسی جماعتیں اداروں کے آپس کے تناؤ میں کوئی اپنا حصہ ڈالیں۔

دوسری جانب وزیر ریلوے اعظم خان سواتی نے حافظ حسین کو ہیرا قرار دیتے ہوئے پی ٹی آئی میں شمولیت کی دعوت دیدی۔ نجی ٹی وی کے مطابق اعظم سواتی نے کہاکہ میں دو ہزار تین میں جے یو آئی میں شامل ہوا اور دوہزار گیارہ میں سینیٹ سے استعفیٰ دیا، اس عرصے میں جے یو آئی (ف) کی مالی ضروریات پوری کرتا رہا۔اعظم سواتی نے حافظ حسین احمد کو انمول ہیرا قرار دیتے ہوئے کہا کہ کاش وہ پی ٹی آئی میں شامل ہوجائیں، انہوں نے انکشاف کیا کہ حافظ حسین کو دوہزار گیارہ میں کئی بار عمران خان کے پاس لیکر گیا تھا، فضل الرحمان نے نجانے کیوں محمد حسین کو قابلیت کے باوجود پیچھے رکھا، حافظ حسین احمد کو وہ مقام اور عزت نہیں دی جس کے وہ حق دار ہیں۔اعظم سواتی نے بتایا کہ جے یو آئی کی ہیجانی کیفیت کا باب مولانا شیرانی سے شروع ہوا، مولانا شیرانی زیرک سیاستدان اور اعلیٰ ترین عالم دین ہیں، ان کا علم بغاوت حق او رسچ کی آواز ہے یہ علما کی تاریخ دہرا رہے ہیں، اعظم سواتی نے مولانا شجاع الملک کو بھی بہادر،سچااورکھرا انسان قرار دیتے ہوئے کہا کہ پورے پاکستان کے علمام ولانا شجاع الملک کی آواز سنیں۔وزیر ریلوے نے ہا کہ سینیٹر راحت حسین کی فضل الرحمان پر تنقید بھی وزن رکھتی ہے، مولانا راحت حسین نے کبھی غلط بات نہیں کی، اکرم درانی اچھا دوست ہے اور وہ پارٹی کو مضبوط بنانے کیلئے ملکر کام کرتے رہے۔

About Admin

Check Also

ملک بھر میں موسم کیسا رہے گا؟ محکمہ موسمیات نے خطرے کی گھنٹی بجادی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) محکمہ موسمیات نے بڑی خبر دے دی۔ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *