چیئرمین سینیٹ کا انتخاب،حکومتی اتحاد کا ایک ووٹ ضائع ہونے کا خدشہ

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) حکومت کے لئے ایک سے بڑھ کر ایک بُری خبر آرہی ہے ایک جانب تو الیکشن کمیشن نے پاکستان تحریک انصاف کی درخواست پر  پی ڈی ایم کے امیدوار یوسف رضا گیلانی کی کامیابی کا نوٹی فکیشن روکنے کی پی ٹی آئی کی ایک اور درخواست مسترد کردی گئی ہے دوسری جانب چیئرمین سینیٹ کے انتخاب میں حکومتی اتحاد کا ایک ووٹ ضائع ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا۔

میڈیا ذرائع کے مطابق حکومتی اتحاد میں شامل جماعت متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کی نو منتخب سینیٹرخالدہ اطیب عدت میں ہیں جس کی وجہ سے خدشہ ہے کہ چیئرمین سینیٹ کے الیکشن میں حکومتی اتحاد کا ایک ووٹ ضائع ہوجائے گا ، اسی خدشے کے پیش نظر نو منتخب سینیٹر کے حلف اور ووٹ کے استعمال کیلئے مشاورت کردی گئی۔ بتایا گیا ہے کہ اس ضمن میں ایم کیوایم پاکستان کے سربراہ خالد مقبول صدیقی نے پارٹی کی ایک اور خاتون رہنماء کشور زہرہ کو خصوصی ہدایات جاری کی گئیں ، جس کے بعد انہوں نے خالدہ اطیب سے رابطہ کیا ، جس میں نو منتخب سینیٹر کے حلف اور ووٹ کے استعمال کیلئے مشاورت کی گئی۔3 مارچ کو ہونے والے سینیٹ الیکشن کے بعد چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا انتخاب اہم مرحلہ ہے ، شیڈول کے مطابق 12مارچ کو دوپہر میں چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا انتخاب ہو گا جب کہ ریٹائر ہونے والے سینیٹرز کی مدت 11 مارچ کو ختم ہو جائے گی ، جس کے بعد 12 مارچ کو صبح کے اوقات میں نو منتخب سینیٹرز حلف اٹھائیں گے اور 12مارچ کو ہی دوپہر میں چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا انتخاب ہو گا۔ یاد رہے کہ سینیٹ کی کل 48 نشستوں کے الیکشن کے سلسلے میں صوبائی اسمبلیوں اور قومی اسمبلی میں ہونے والی ووٹنگ میں حکمراں جماعت تحریک انصاف کو برتری حاصل ہے۔

About Admin

Check Also

سکولوں میں موسم گرما کی تعطیلات نہیں ہوں گی حکومت نے فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) کورونا وائرس کے باعث ہونے والی تعطیلات والدین اور بچوں کے لئے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *