Breaking News

ہمارا پیپلز پارٹی سے کوئی اتحاد یا معاہدہ نہیں، ایم کیو ایم سربراہ نے بڑا یوٹرن لے لیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے قومی اسمبلی بحال کرتے ہوئے 9 اپریل کو ہفتے کی صبح 10 بجے قومی اسمبلی کا اجلاس بلانے کا حکم دیا تھا۔ سپریم کورٹ نے قرار دیا تھا کہ سپیکر اجلاس بلا کر تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ کرائیں گے، تحریک عدم اعتماد کامیاب ہونے کی صورت میں نئے وزیر اعظم کا انتخاب ہوگا۔

عدالت نے یہ بھی قرار دیا ہے کہ کسی بھی رکن قومی اسمبلی کو ووٹ کاسٹ کرنے سے نہیں روکا جائے گااور جب تک تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ نہیں ہو جاتی تب تک اجلاس بھی ملتوی نہیں کیا جا سکتا ۔ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان ( ایم کیو ایم) کے سربراہ خالد مقبول صدیقی نے واضح کیا ہے کہ الیکشن ہارنے کا خوف رکھنے والے الیکشن نہ لڑیں۔ہمارا پیپلز پارٹی سے کوئی اتحاد یا معاہدہ نہیں ہے، ہم نےپیپلز پارٹی سے ورکنگ ریلیشن شپ قائم کیا ہے۔ایم کیو ایم کے جنرل ورکرز اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ الیکشن ہارنے کا خوف رکھنے والے الیکشن نہ لڑیں، جن کے 14 ایم این اے ہیں وہ کہہ رہے ہیں کہ ہم نے کراچی کیلئے کچھ نہیں کیا اور خود کو بیچ دیا، ہم نےاپنے آپ کو ایم کیو ایم کو بیچا ہے۔ ایک اچھا وقت ہماری طرف بڑھ رہا ہے جس کا فائدہ اٹھائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اب دھوکہ دینے کی باری ہماری ہے لیکن ایم کیو ایم پاکستان کی تاریخ اور تنظیم دھوکہ دینے کی اجازت نہیں دیتی۔ ایسی کوئی مقدس سرزمین نہیں جہاں صوبے نہ بن سکیں، سندھ ، پنجاب جہاں بھی ضرورت ہے وہاں صوبے بننے چاہئیں۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *