Breaking News

بڑی خبر:29 دسمبر 2021 کو پاکستان کے ستارے نے جگہ بدلی ، سامعہ خان کی عمران خان سے متعلق پیشنگوئی جو پوری ہوگئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان 2022 میں کہاں کھڑا ہے اور آگے کیا ہونے جا رہا ہے، اس حوالے سے ماہر علم نجومیات مختلف رائے رکھتے ہیں۔آج کی سیاسی صورتحال کے پیش نظر پاکستان میں کیا تبدیلی آنے والی ہے؟مشہور ماہر علم نجوم سامعیہ خان کا کہنا ہے 2022 کا سال بہت تیزی سے تبدیلی کا سال ہو سکتا ہے۔

دسمبر 2019 میں آسمان پر ایک نقشہ بنا تھا۔ ایسا ہی نقشہ 911 کے وقت میں بنا تھا۔ جس کے بعد دنیا وار زون میں چلی گئی تھی۔سامعیہ خان کا کہنا تھا کہ مجھے کورونا کے حوالے سے بھی 2019 میں وار زون نظر آ رہا تھا۔سامعیہ خان نے مزید بتایا کہ 29 دسمبر 2021 کو پاکستان کے ستارے نے جگہ بدلی ہے۔ سامعیہ کے مطابق پاکستان کا نصیب کھلنے والا ہے۔ لیکن عمران خان کے وزیر اعظم کے سوال پر کہنا تھا کہ عین ممکن ہے خان صاحب مضبوط اپوزیشن لیڈر کے طور پر سامنے آئیں مگر وہ انہیں وزیراعظم بنتا نہیں دیکھ رہی ہیں۔ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ایک نئے نظام کی طرف جا رہا ہے۔ 2022 تبدیلی کا سال ہے جس میں نظام بھی تبدیل ہوگا۔ جبکہ مولانا فضل الرحمان سے متعلق کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان اسی طرح پریشر گروپ کے طور پر ہی نظر آ سکتے ہیں۔جبکہ سامعیہ نے بتایا کہ 11 اکتوبر 2021 تک پاکستان پر بہت خطرات تھے مگر الحمدللہ پاکستان نے ان خطرات کو برداشت کر لیا ہے۔ اب پاکستان کے حوالے سے وہ پیشن گوئیاں بھی سچ ثابت ہو جائیں گی جب پاکستان بہت اہمیت کا حامل ہو جائے گا۔دوسری جانب یہ بھی بتا دیا کہ اس سال بلاول بھٹو کی شادی کا ستارہ کافی اسٹرانگ ہے۔ جبکہ مشورہ بھی دیا کہ بلاول اس سال شادی کی شیروانی سلوا کر رکھ لیں۔ماہر علم روحانیات رابعہ سید بتاتی ہیں کہ شہباز شریف پر مقدمات کی مشکلات یوں ہی جاری رہیں گی۔ ن لیگ بہتری کی کوشش کرے گی مگر کوشش کی حد تک کی رہے گی، جبکہ شہباز شریف کی صحت کے حوالے سے بھی پیش گوئی ہے کہ طبیعت ناساز ہو سکتی ہے۔ یہ انٹرویو انہوں نے 92 نیوز کو دیا تھا۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *