Breaking News

پاک فوج بیرکوں میں بیٹھنے والی فوج نہیں ، صاف نظر آرہا ہے کہ ۔۔۔۔۔سابق گورنر پنجاب لیفٹننٹ جنرل (ر) خالد مقبول کا اہم بیان سامنے آگیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) لیفٹیننٹ جنرل (ر) خالد مقبول نے کہا کہ کچھ سیاستدان سمجھتے ہیں فوج پر تنقید کرنے سے انہیں مقبولیت حاصل ہوگی. فوج کو متنازع بنانے کے عمل کی عوام میں پذیرائی نہیں ہے، افواج پاکستان کا فیصلہ ہے کہ سیاسی فیصلے اب سیاسی ٹیبل پر ہوں گے، فوج نے واضح کردیا وہ سیاست میں کسی قسم کی مداخلت نہیں کرے گی۔

وفاقی وزیر آبی وسائل خورشید شاہ نے کہا ہے کہ بلاول بھٹو کو مارشل لاء کی وارننگ پر پارلیمانی کمیشن بنایا جانا چاہئے، لندن میں کابینہ کی میٹنگ نہیں ن لیگ کی پارٹی میٹنگ ہو رہی ہے۔ وہ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں میزبان حامد میر سے گفتگو کررہے تھے۔پروگرام میں سابق گورنر پنجاب لیفٹیننٹ جنرل (ر) خالد مقبول بھی شریک تھے۔ خالد مقبول نے کہا کہ پاک فوج کی سب سے بڑے حمایتی پاکستان کی عوام ہیں، فوج کیخلاف جب بھی کسی نے بلاجواز نعرہ لگایا اسے عوام نے پذیرائی نہیں دی، فوج نے واضح کردیا وہ سیاست میں کسی قسم کی مداخلت نہیں کرے گی۔خالد مقبول کا کہنا تھا کہ ماضی میں تمام سیاسی جماعتوں کا فوج سے واسطہ رہا ہے، یہ کہا جاسکتا ہے کہ ہر سیاسی جماعت اپنے وقت میں فوج کی منظور نظر تھی، لوگ ہرمشکل میں مدد کیلئے فوج کی طرف دیکھتے ہیں، قوم کو ضرورت ہوئی تو فوج کا ہر سپاہی بڑی قربانی کیلئے تیار ہوگا. پاک فوج بیرکوں میں رہنے والی فوج نہیں ہے، یہ فوج پچھلے بیس سال میں ایسے محاذوں پر کامیاب ہوئی جہاں دنیا کی بہترین افواج ناکام ہوئی۔ خالد مقبول نے کہا کہ فوج میں تحمل اور بردباری آگئی ہے. فوج کو متنازع بنانے کے عمل کی عوام میں پذیرائی نہیں ہے، افواج پاکستان اس قسم کے نعروں پر دباؤ میں نہیں آئے گی، افواج پاکستان کا فیصلہ ہے کہ سیاسی فیصلے اب سیاسی ٹیبل پر ہوں گے، اب فیصلے سیاستدان کریں گے، فوج کا کام ملک کو غیریقینی حالات، انتشار اور باہمی لڑائی سے بچانا ہے۔

About Admin

Check Also

فوج حکومت سنبھا ل لے ہم حکومت چھوڑنے کو تیا ر ہیں اہم ترین وفاقی وزیر نے بڑا اعلان کر دیا، ساری گیم پلٹ گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین اور …

Leave a Reply

Your email address will not be published.