Breaking News

حمزہ شہباز کی کرسی خطرے میں۔۔۔ پی ٹی آئی کی طرف سے بڑا قدم اٹھا لیا گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز شریف نے وزرات اعلیٰ کے لیے اپنی حمایت میں ووٹ دینے والے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے 25 منحرف ارکان اسمبلی کو الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کی جانب سے ڈی سیٹ کیے جانے کے بعد اپنے عہدے سے استعفیٰ دینے سے انکار کر دیا ہے۔

دوسری جانب پی ٹی آئی اور پاکستان مسلم لیگ (ق) پر مشتمل اپوزیشن اتحاد آنے والے روز میں اس دعوے کے ساتھ ضمنی انتخاب کی پیش گوئی کر رہے ہیں کہ حمزہ شہباز غیر قانونی طور پر زیادہ عرصے تک عہدے پر براجمان نہیں رہ سکتے۔نجی اخبار کی رپورٹ کے مطابق ضمنی انتخاب ہونے کی صورت میں 5 خالی مخصوص نشستوں کی الاٹمنٹ اہم کردار ادا کرے گی، ڈی سیٹ ہونے والے پی ٹی آئی کے 25 ارکان صوبائی اسمبلی میں سے 5 مخصوص نشستوں پر منتخب ہوئے۔قانونی ماہرین کے مطابق الیکشن کمیشن اب ان نشستوں کو پنجاب اسمبلی میں ہر پارٹی کی موجودہ تعداد کے مطابق تقسیم کرے گا، یعنی اگر پی ٹی آئی کو سب سے زیادہ حصہ ملتا ہے تو وہ وزیر اعلیٰ کا عہدہ حاصل کرنے میں کامیاب ہو سکتی ہے۔حمزہ شہباز نے بظاہر معزول وزیراعظم عمران خان کے نقش قدم پر چلتے ہوئے ‘آخری گیند تک کھیلنے’ کا فیصلہ کیا ہے تاہم پی ٹی آئی کا کہنا ہے کہ وہ عدالت عظمیٰ اور ای سی پی کے فیصلوں کے مطابق قانونی طریقے سے وزیراعلیٰ پنجاب کو گھر بھیجے گی۔مسلم لیگ (ق) کے سابق وفاقی وزیر مونس الٰہی نے کہا کہ 25 لوٹوں کو ڈی سیٹ کیے جانے کے بعد جعلی وزیراعلیٰ کا کھیل ختم ہوگیا۔انہوں نے مزید کہا کہ ایوان میں اکثریت کھونے کے بعد حمزہ شہباز کے پاس عہدے سے چمٹے رہنے کا کوئی اخلاقی یا قانونی جواز نہیں ہے۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *