Breaking News

حکومت نے پی ٹی آئی کارکنان پرکونسے ’شیل‘ استعمال کیے؟ حامد میر پھٹ پڑے، ثبوت دکھا دیئے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے کہا ہے کہ میں خود بھی دفتر آتے ہوئے پولیس کی جانب سے تحریک انصاف کے مظاہرین پر آنسو گیس کی شیلنگ کی زد میں آیا ہوں۔اپنے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے کہا حکومتی رہنماؤں کی ایک کے بعد ایک پریس کانفرنس میں دعویٰ کیا جا رہا ہے۔

کہ پی ٹی آئی کا مارچ ناکام ہوگیا، ایسا لگتا ہے جہاں سے یہ پریس کانفرنس ہورہی ہیں وہاں حالات معمول کے مطابق ہیں۔انہوں نے کہا کیونکہ اسلام آباد کی صورتحال یہ ہے کہ میں بھی اپنے دفتر آتے ہوئے آنسو گیس کی شیلنگ کی زد میں آیا ہوں، جب میں نے آنسو گیس کے شیل اٹھاکر دیکھا تو یہ ایکسپائر گیس تھی، میرے پروگرام میں شرکت کیلئے آنے والی منیزے جہانگیر بھی آنسو بھری آنکھیں لے کر یہاں پہنچی ہیںمنیزے جہانگیر نے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ بڑی تعداد میں لوگ نہیں نکلے مگر جلوس و جلسوں میں شرکت کیلئے آنے والوں کو جب روکا جاتا ہے یا ان پر آنسو گیس پھینکی جاتی ہے تو لوگ اپنی پوری طاقت میں باہر نہیں نکلتے۔حامد میر نے اپنے پروگرام کا یہ کلپ ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے اپنے بیان میں لکھا کہ حکومتی وزراء سارا دن دعویٰ کرتے رہے کہ عمران خان کا مارچ ناکام ہو گیا لیکن جو ہم نے ڈی چوک میں دیکھا وہ مختلف تھا یہ جگہ تحریک انصاف کے کنٹرول میں تھی۔دوسری جانب سینئر صحافی حامد میر نے کہاہے کہ اگر کوئی کہہ رہاہے کہ عمران خان ناکام ہو گئے ہیں اور وہ 20 لاکھ بندے نہیں لا سکے تو پھر آپ ان سے بات چیت کیوں کر رہے تھے ۔سینئر صحافی حامد میر نے عمران خان کے لانگ مارچ اور پھر دھرنا دیئے بغیر واپس جانے پر تجزیہ کرتے ہوئے کہا ہے۔

کہ ”ملاقاتیں تو ہوتی رہتی ہیں، یہ ملاقاتیں تو اس وقت بھی ہو رہی تھیں جب عمران خان کا قافلہ صوابی سے نہیں چلا تھا ، جب وہ اسلام آباد کی طرف گامزن تھے اور حکومتی وزراءتردیدیں کر رہے تھے کہ تحریک انصاف سے کوئی رابطہ نہیں ہے ، لمبی لمبی پریس کانفرنس ہو رہی تھی ، کہ عمران خان کا لانگ مارچ ناکام ہو گیا ، جب عمران خان اسلام آباد میں داخل ہو گئے تو ملاقاتیں اس وقت بھی ہو رہی تھیں ۔کل بھی مسلم لیگ ن کے وزراءنے عمران خان کا دھرنا شروع نہیں ہو ا تو انہوں نے پریس کانفرنس شروع کر دی کہ سب ناکام ہو گیا ، جب ہم نے شو شروع کیا تو اس وقت اردگرد وہ صورتحال نہیں تھی جو مریم نواز اور رانا ثناءاللہ نے بتائی تھی ۔ سپریم کورٹ میں آپ نے دہائی کہ عمران خان نے توہین عدالت کی تو کیوں انہوں نے آپ کی بات نہیں سنی۔حامد میر کا کہنا تھا کہ بندے جتنے بھی تھے انہوں نے گرین بیلٹ کا جوحشر کیا ہے ،مریم اورنگزیب اور رانا ثناءاللہ آ کر دیکھیں کہ کتنے لوگ تھے ،ابھی بھی وہاں پر جو کوڑا بکھرا ہوا ہے وہ بتا رہا ہے کہ یہاں پر کتنے لوگ تھے ، عمران خان اگر واپس چلے گئے ہیں تو اس کا مطلب یہ نہیں کہ وہ اپنا مقصد حاصل نہیں کر سکے ، وہ کہہ رہے ہیں کہ میں 6 دن بعد دوبارہ آﺅں گا ، آپ کی کانپیں ٹانگ رہی ہیں، تو میں سمجھتا ہوں کہ عمران خان 20لاکھ لوگ نہیں لائے یہ ان کی ناکامی ہے ، آپ کے دعوے بھی آپ کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہیں ۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *