Breaking News

اگر اسٹیبشلمنٹ آپ کا ساتھ نہیں دیتی تو آپ کا اگلا پلان کیا ہو گا ؟ سمیع ابراہیم کے سوال پر عمران خان کا تہلکہ خیز جواب

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان کے سابق وزیرِ اعظم عمران خان نے متنبہ کیا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ نے ’درست فیصلے‘ نہ کیے تو فوج تباہ ہو جائے گی اور ’پاکستان کے تین حصے ہو جائیں گے۔‘ان خدشات کا اظہار انھوں نے نجی ٹی وی چینل کے اینکر سمیع ابراہیم سے گفتگو کے دوران کیا۔

عمران خان کے اس تبصرے پر ان کے سیاسی مخالفین کے علاوہ سوشل میڈیا صارفین کی ایک بڑی تعداد نے ردعمل دیا ہے۔ چیئرمین تحریک انصاف کے حامی جہاں ان کی بات سے اتفاق کر رہے ہیں وہیں بعض لوگوں کا خیال ہے کہ انھیں ’ایسی گفتگو سے گریز کرنا چاہیے تھا۔‘اس انٹرویو کے دفاع میں سابق وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ’عمران خان نے جائز طور پر ان خطرات کی نشاندہی کی جو معاشی تباہی کی صورت میں پاکستان کو درپیش ہوں گے۔‘ان سے پوچھا گیا کہ جب وہ وزیر اعظم تھے تو تحریک عدم اعتماد کی شب پارلیمنٹ کے باہر قیدیوں کی وین کھڑی کی گئی اور ’وہ کون تھا؟ ان کا جواب تھا کہ ’اگر پھر سے ویسی ہی حکومت ملنی ہوتی تو کبھی قبول نہ کرتا۔ یہ ایک اتحادی حکومت تھی، جن لوگوں نے ہمیں جوائن کیا انھیں ہم جانتے نہیں تھے۔اس شو کے دوران عمران خان سے پوچھا گیا کہ اگر ملک کی اسٹیبلشمنٹ ان کا ساتھ نہیں دیتی تو ان کا آئندہ کا لائحہ عمل کیا ہو گا۔ اس کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ‘یہ اصل میں پاکستان کا مسئلہ ہے، اسٹیبلشمنٹ کا مسئلہ ہے۔ اگر اسٹیبلشمنٹ صحیح فیصلے نہیں کریں گے، یہ بھی تباہ ہوں گے۔ فوج سب سے پہلے تباہ ہو گی۔’انھوں نے کہا کہ ‘اگر ہم ڈیفالٹ کر جاتے ہیں تو سب سے بڑا ادارہ کون سا ہے جو متاثر ہو گا، پاکستانی فوج۔‘

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *