Breaking News

“فیصلہ پارلیمانی پارٹی کا ہی قبول ہوگا” ڈپٹی سپیکر کی رولنگ پر سینئر قانون دان اعتزاز احسن کا موقف

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) خیال رہے کہ ڈپٹی سپیکر نے وزیر اعلیٰ پنجاب کے انتخاب کیلئے ڈالے گئے مسلم لیگ ق کے تمام 10 ووٹ مسترد  کردیے۔ ڈپٹی سپیکر کی رولنگ کے بعد ن لیگ کے امیدوار حمزہ شہباز 179 ووٹ لے کر دوبارہ وزیر اعلیٰ پنجاب منتخب ہوگئے۔ ان کے مقابلے میں پرویز الہٰی کو 186 ووٹ ملے تھے۔

تاہم 10 ووٹ مسترد ہونے کے بعد ان کے ووٹوں کی تعداد 176 رہ گئی۔ سینئر قانون دان اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ ڈپٹی سپیکر نے ق لیگ کے ووٹ مسترد کرنے کا فیصلہ غلط ہے، فیصلہ پارلیمانی پارٹی کا ہی قبول ہوگا۔ نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے کہا کہ آرٹیکل 63 اے میں واضح ہے کہ پارلیمنٹ میں پارلیمانی پارٹی کو دسترس حاصل ہے، فیصلہ پارلیمانی پارٹی کا ہی قبول ہوگا، میری نظر میں ڈپٹی سپیکر نے غلط فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آصف زرداری نے وہ کیا جو سیاستدان کرتے ہیں، وہ چوہدری شجاعت کے پاس گئے اور ووٹ مانگا۔انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 63 اے کا پہلا حصہ پارلیمانی پارٹی جب کہ دوسرا حصہ پارٹی سربراہ کے حوالے سے ہے۔  دوسری جانب ڈپٹی سپیکر پنجاب اسمبلی دوست مزاری کی جانب سے وزیر اعلیٰ پنجاب کے انتخاب میں ق لیگ کے ارکان کے ووٹ مسترد کیے جانے پر تحریک انصاف نے عدالت جانے کا اعلان کردیا۔ پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں ڈپٹی سپیکر نے چوہدری شجاعت کا خط پڑھ کر سنایا جس میں ق لیگ کے ارکان کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ حمزہ شہباز کو ووٹ کاسٹ کریں۔ ڈپٹی سپیکر نے پارٹی سربراہ کے خط کے تناظر میں ق لیگ کے ارکان کے ووٹوں کو مسترد کردیا۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *