Breaking News

“یہ خام خیالی ہے کہ آپ ان حلقوں میں ضمنی الیکشن کرائیں گے” 11 استعفوں کی منظوری پر پی ٹی آئی نے واضح پیغام دے دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)واضح رہے کہ سپیکر قومی اسمبلی  راجہ پرویز اشرف نے پی ٹی آئی کے 11 اراکینِ قومی اسمبلی کے استعفے منظور کر کے مراسلہ الیکشن کمیشن کو بھجوا دیا ہے۔ الیکشن کمیشن ان اراکین قومی اسمبلی کے استعفے قبول کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرے گا۔جس کے بعد ان حلقوں میں نئے الیکشن ہوں گے۔

جن ارکان کے استعفے قبول کیے گئے ہیں ان میں علی محمد خان(این اے-22)، فضل محمد خان(این اے-24)، شوکت علی(این اے-31)،فخر زمان خان(این اے-45)، فرخ حبیب(این اے-108)، اعجاز احمد شاہ(این اے-118)، جمیل احمد خان(این اے-237)،محمد اکرم چیمہ(این اے-239)، عبدالشکور شاد(این اے-246) کے استعفے منظور کیے ہیں۔ اس کے علاوہ خواتین ارکان ڈاکٹر  شیریں مزاری اورشندانہ گلزار خان کےاستعفے بھی قبول کیے گئے ہیں۔ سپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے 11 ارکان کے استعفے منظور کیے جانے پر پی ٹی آئی کا کہنا ہے کہ اس منظوری کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔ تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے اس حوالے سے اپنے بیان میں  کہا  ہے کہ سابق   ڈپٹی سپیکر قاسم سوری پہلے ہی استعفے منظور کر کے الیکشن کمیشن کو بھجوا چکے ہیں اس لیے سپیکر راجہ پرویز اشرف  کے 11  استعفے  منظور کرنے کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔ انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا “یہ خام خیالی ہے کہ آپ ان حلقوں میں ضمنی الیکشن کرائیں گے، ملک عام انتخابات کی طرف بڑھ رہا ہے اور موجودہ حکمران انتخابات نہیں روک سکتے۔”ترجمان قومی اسمبلی کے مطابق سپیکر نے استعفے آئین پاکستان کے  آرٹیکل 64 کی شق (1) کے تحت تفویص اختیارات کو بروئے کار لاتے ہوئے منظور کیے۔پی ٹی آئی کے ممبران قومی اسمبلی نے 11 اپریل 2022 کو اپنی نشستوں سے استعفے دیئے تھے۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *