Breaking News

چوہدری شجاعت حسین کو (ق) لیگ سے نکالنے کی کارروائی مشکوک: حیران کن رکاوٹ کھڑی ہو گئی

 مسلم لیگ (ق) کے ترجمان چوہدری شفاعت حسین نے کہا ہے کہ کامل علی آغا مسلم لیگ پنجاب کے جنرل سیکرٹری ہیں، وہ کیسے مرکزی صدر کے خلاف کوئی کارروائی کرسکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ سینٹرل ورکنگ کمیٹی کے اجلاس کے بارے میں خبریں من گھڑت اور بے بنیاد ہیں۔

افواہوں سے گریز کیا جائے۔ مسلم لیگ کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا کوئی وجود ہی نہیں۔چوہدری شفاعت حسین نے کہا کہ مسلم لیگ کے آئین کے تحت پارٹی کا کوئی اجلاس مرکزی صدر چوہدری شجاعت حسین کی مشاورت اور مرضی کے بغیر نہیں بلایا جاسکتا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز (ق) لیگ کی سینٹرل ورکنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا، جس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے سینیٹر کامل علی آغا کا کہنا تھا کہ اجلاس میں موجودہ سیاسی صورتحال کو زیر غور لایا گیا۔انہوں نے بتایا تھا کہ اجلاس میں طے پایا کہ چوہدری شجاعت حسین کو صدارت سے الگ کیا جائے۔ دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)  اور مسلم لیگ ق کے مشترکہ  امیدوار سبطین خان پنجاب اسمبلی کے سپیکر منتخب ہو گئے۔ پینل آف چیئرمین وسیم بادوزئی  کی جانب سے سبطین خان کی کامیابی کا اعلان کیا گیا اور کہا گیا کہ سبطین خان ہاؤس کے نئے کسٹوڈین ہوں گے۔تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے سبطین خان نے 185  ووٹ لیے۔ ان کے مقابلے میں مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے سیف الملوک کھوکھر اتحادی جماعتوں کے امیدوار تھے، انہوں نے 175 ووٹ حاصل کیے۔ سپیکر پنجاب اسمبلی کے انتخاب کیلئے ڈالے گئے چار ووٹ مسترد بھی ہوئے۔

About Admin

Check Also

قبل از وقت انتخابات ہوئے تو کون سی جماعت فائدے میں رہے گی؟ سیاسی ماہرین نے عوام کو صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان میں جاری سیاسی و معاشی بحران کے تناظر میں بعض ماہرین …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *