Breaking News

میری اہلیہ خواجہ سرا ہے،عدالت اس کی جنس۔۔شوہرنے بیوی پر کیس کردیاپھرعدالت میں کیا ہوا سوچ کے آپ ہکا بکا رہ جائیں گے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)لاہور ہائی کورٹ نے بیوی کا میڈیکل کرواکے اس کی جنس کا تعین کرنے سے متعلق شہری کی درخواست پر تحریری فیصلہ جاری کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں شہری عبدالقیوم کی جانب سے درخواست دائر کی گئی تھی جس میں موقف اختیار کیا کہ اس کی اہلیہ ایک خواجہ سراء ہے۔

اور اس کے والدین نے دھوکہ سے اس کی شادی مجھ سے کروادی، شک پہنچنے پر میں نے میڈیکل کروانے کا کہا تو میری بیوی گھر چھوڑ کر چلی گئی، عدالت سے درخواست ہے کہ اہلیہ کامیڈیکل کرواکے اس کی جنس کا تعین کرے۔مقدمے کے دوران خاتون کے وکیل نے موقف اپنایا کہ عبدالقیوم نے اپنی بیوی کو خود گھر سے نکال دیا جب اس نے اپنے جہیز اور نان ونفقہ کا دعویٰ کیا تو شوہر نے اس پر الزام لگادیا کہ وہ خواجہ سراء ہے۔سماعت کےدوران عدالتی معاون نے بھی خاتون کے میڈیکل کی مخالفت کرتے ہوئے کہا تھا کہ پہلے عبدالقیوم کو اپنے الزامات کو ثابت کرنے کیلئے ٹھوس شواہد دینا ہوں گے، فیملی کورٹ صرف الزام کی بنیاد پر خاتون کے میڈیکل کا حکم نہیں دے سکتی۔لاہور ہائی کورٹ کے جج جسٹس طارق سلیم شیخ نے مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ فیملی کورٹ خاتون کے میڈیکل کروانے سے متعلق درخواست پر دوبارہ سماعت کرے اور جنس کے تعین سے متعلق درخواست کو زیر التوا رکھا جائے۔عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ فیملی کورٹ خاتون پر لگائے گئے الزامات پر اسے طبی معائنے کیلئے مجبور نہ کرے، خاتون اگر اپنی رضا مندی ظاہر نہ کرے تو فیملی کورٹ جو مناسب سمجھے فیصلہ کردے، جنس کے تعین کیلئے میڈیکل کروانے کا حکم ناگزیر صورتحا ل ​​​​​​​ میں ہی جاری کیا جائے۔عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ انسانی حقوق کے قوانین کے مطابق پرائیویسی کسی بھی شخص کا بنیادی حق ہے اس لیے عدالت کو کسی بھی فریق کے میڈیکل کیلئے حکم دینے سے پہلے حالات کو پرکھنا چاہئے۔

About Admin

Check Also

کبھی ایسا بھی ہوتا ہے۔۔۔ 30سال پہلے صوابی سےلاپتہ ہونیوالا شخص اچانک گھرپہنچ گیا، گھر والوں کی خوشی زیادہ دیر قائم نہ رہی ، صرف آدھے گھنٹے بعد کیا کہہ کر دوبارہ کہاں چلا گیا؟

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) موضع ڈاگئی ضلع صوابی سے تیس سال قبل پُر اسرار طور پر …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *